چہرہ چھونے سے گریز کریں

تحقیق اور مطالعہ کی بنیاد پر بیماری سے بچاو کے لیے سب سے مشکل حفاظتی قدم، چہرے کو چھونے گریز کرنا ہے۔
ایک مطالعہ میں نیو ساؤتھ ویلز یونیورسٹی میں سال 2015 میں میڈیکل طلبہ کا مشاہدہ کیا گیا۔ نتائج نے اس حقیقت کو روشن کیا کہ ہر طالب علم اوسطا کم سے کم 23 بار چہرے کو چھوتا ہے۔
چہرے کے ساتھ ہاتھ سے براہ راست کسی چیز کوچھونے سے گریز کرنا انتہائی ضروری ہے کیونکہ جراثیم آسانی سے آنکھوں ، ناک اور منہ کے ذریعے جسم میں داخل ہوجاتے ہیں۔ داغے ہوئے ہاتھ آنکھوں کو ملنے اور چہرے کو کہیں بھی چھونے سے خصوصا ناک اور منہ کو، آسانی سے وائرس سے پھیلاتے ہیں۔